سندھ ہائی کورٹ نے گٹکا اور مین پوری بنانے اور فروخت کرنے والوں کے خلاف حتمی کاروائی کا حکم دے دیا

0
61

کراچی: سندھ ہائی کورٹ نے گٹکے اور مین پوری بنانے اور فروخت کرنے والوں کے خلاف حتمی کاروائی کا حکم صادر کردیا۔

سندھ ہائی کورٹ میں گٹکا، مین پوری اور ماوا کی تیاری و فروخت کے معاملے پر کیس کی سماعت ہوئی، جس میں سندھ ہائی کورٹ نے متعدد تھانوں کے ایس اوز کی جانب سے جمع کروائی گئی رپورٹ کو غیر تسلی بخش قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ چیزیں صحت کے لیے کتنی مضر ہیں، جب کوئی کاروائی دکھنے میں نہیں آرہی تو ان رپورٹس پر کیسے یقین کرسکتے ہیں۔

سماعت کے دوران درخواست گزار نے عدالت کو بتایا کہ ابھی تک مختلف ناموں سے گٹکا مارکیٹ میں فروخت ہورہا ہے تاہم پولیس صرف نمائشی کاروائی کرتی ہے اور ملزمان کو چھوڑ دیا جاتا ہے۔

عدالت نے درخواست گذار کے دلائل سنتے ہوئے پولیس کی کارکردگی پر عدم اطمینان کا اظہار کیا اور کہا کہ ان گٹکا فروشوں کے خلاف حتمی کاروائی آخر کب عمل میں لائی جائے گی۔

عدالت نے اس ضمن میں فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ گٹکا فروشوں کے خلاف حتمی کاروائی کرکے 13 نومبر تک رپورٹ جمع کروانے کا حکم پولیس حکام کو جاری کردیا۔

LEAVE A REPLY